اسمبلیوں سے استعفوں کی دھمکیکیا اپوزیشن میں اتفاق نہیں!

اینا لاٹیکل ویوپوائنٹ: (پی ٹی آئی)معاون خصوصی وزیراعظم نے کہا کہ ان تینوں پارٹیز کی تحریک کا موقف یہ ہے کہ ہم اسٹیبلشمنٹ کے خلاف ہیں اور اس کاکردار ختم کرناہے۔ پیپپلز پاڑٹی کبھی بھی استعفا نہیں دےگی اور جہاں تک تعلق فضل الرحمان کا ہے تو یہ اک جانب قومی اسبملی سے استعفادیتےہیں اور دوسری جانب مشرف کو بطور صدر کے لے ووٹ دےدیاتھا۔ تو اسیےمیں اور کیا کہا جا سکتا ہے۔
سینیٹر ڈاکٹرمصدق ملک نے کہا ہم تینوں پاڑٹیز اون بورڈ ہیں اور ہم جلسے بھی کریں گے اور تحریک کو آئین کی پاسداری کے ساتھ چلانے گیں۔جیسےکےفضل الرحمان نے کہا کہ ہمارا تنازعہ فوج کے ساتھ نہیں اور نواڑشریف نے بھی حالیہ تقریرمیں فوج کو پانچ بار سلوٹ پیش کیا ۔ ہم فوجکے ساتھ ہیں اور ہمیشہ رہے گئیں۔
بجلی مہنگی ہو جانے پر سب کچھ مہنگا ہو جاتا ہے کس طرح سے ان سب سے نمٹا جاسکتاکس طرح سے عوام کو ریلیف دیا جا سکتا ہے۔۔ علی نواز اعوان کے مطابق سندھ حکومت ان سب کی ذمہ دار ہے اور رواں سال گندم کی پیداوار میں کمی آئی جس کی وجہ سے آٹا منہگا ہو گیاچینی , ادوایات مہنگی۔۔گیس مہنگی ۔سبزیوں کی قمیتوں میں اضافہ ہم کو ملک چالانے کے لیے آئی ایم ایف کے سہارے چھوڑ دیا ان کی بھی شرائط ہوتی ہیں ۔%4•5کی معشیت دے کر ان کی حکومت گئ۔
مصدق ملک نے کہا ولرڈ بینک کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کوقحط کا سامنا ہوسکتا ہےاور کورونا کی بھی دوسری لہر کا عروج پر آنےکا خدشہ وزیرصحت نےبھی آگاہ کر دیا لیکن یہ خدشہ اس لیے بڑھنے کا ڈر ہے کیوں نکہ ہمارے جلسوں اور دھرنوں کا وقت ا رہا ہے پہلے توحکومت قابو پا چکی تھیں اب اچانک سے مریض بڑھ رہے ہیں اگر حکومت نہیں کرنی اتی تو استعفا دےدیں اور دھرنے کریں جو کے آتا ہے ملک کو اور نہ نقصان پچہاے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں