اسد عمر نے خبردار کیا ہے کہ کرونا وائرس کے ڈیلٹا ویری انٹ کے مریضوں کی تعداد بڑھ رہی ہے

جمعرات کو این سی او سی کے سربراہ اسدعمر نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی بھارتی ڈیلٹا ویری انٹ تیزی سے پھیل رہا ہے۔ خدشہ ہے کہ ڈیلٹا کیسز کی وجہ سے اسپتالوں میں مریضوں کی تعداد بڑھے گی۔
اسد عمر نے بتایا کہ اسپتالوں میں مریضوں کے داخلے اور تشویشناک مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ شہریوں کو چاہئے کہ ایس او پیز پر عمل کریں اور ویکسینیشن کروائیں۔

گذشتہ روز اسد عمر نے ٹویٹ کرتے ہوئے یہ بھی بتایا کہ اگست کے آخر تک 24 بڑے شہروں کے 18 سال سے زائد عمر کے 40 فیصد آبادی کی ویکسینیشن کا ہدف مقرر کیا گیا اور 20 شہروں میں یہ ہدف حاصل کرلیا گیا تاہم حیدرآباد، مردان، نوشہرہ اور کوئٹہ میں یہ ہدف حاصل نہیں ہوا۔

اسدعمر نے مزید بتایا کہ پاکستان میں 35 فیصد ویکسینیشن کی اہل آبادی کم ازکم پہلی خوراک لگا چکی ہے۔اسلام آباد میں 69 فیصد، آزاد کشمیر میں 51 فیصد ویکسین ڈوزز لگ چکی ہیں۔ گلگت بلتسان میں 39 فیصد، پنجاب میں 37 فیصد، خیبرپختونخوا میں 35 فیصد، سندھ میں 32 فیصد جبکہ بلوچستان میں 12 فیصد خوراکیں لگ چکی ہیں۔

واضح رہے کہ این سی او سی کے مطابق کمزور قوت مدافعت والے12سے17سال کے افراد فائرز ویکسین لگوا سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں