مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز ڈٹ گئیں، نیب کو دھمکی بھی دے ڈالی، کہا قومی احتساب بیورو (نیب) کے سامنے 26 مارچ کو پیش ہوں گی جبکہ اب قربانیاں دینے کا نہیں حساب لینے کا وقت ہے۔
لاہور میں یوتھ کنونشن سے خطاب میں مریم نواز نے کہا کہ نوازشریف کو 2017 میں جھوٹے الزام پرنکالا گیا اور آج 22 کروڑ عوام پوچھ رہی ہے کہ نوازشریف کو کیوں نکالا؟ آپ کے پاس ہے کوئی جواب کہ نوازشریف کوکیوں نکالا؟
انہوں نے کہا کہ نوازشریف کواقامے پرنکالا گیا، نوازشریف کوبیٹی سمیت جیل بھیج دیا گیا، جنوبی پنجاب محاذ ڈرامےکا ڈراپ سین ہوگیا ہے، چند لوٹوں کے علاوہ کسی نے ن لیگ کو نہیں چھوڑا، یہ لوگ کہتےتھےکہ نوازشریف کی سیاست اورپارٹی ختم ہوگئی ہے۔
مریم نواز نے قومی احتساب بیورو (نیب) کی طلبی کے حوالے سے کہا کہ نیب نے الزام لگایا کہ میں اداروں کے خلاف بیان دیتی ہوں، نیب کوبیانات جانچنے کا ٹھیکہ کس نے دیا ہے؟نوازشریف لندن میں بیٹھے ہیں مگراس کے ڈرسے ان کی ٹانگیں کانپ رہی ہیں، نیب بیانات کا چوکیداربنا بیٹھا ہے، نوازشریف کی بیٹی ہوں آپ سے ڈرتی نہیں۔
لیگی نائب صدر نے الزام عائد کیا کہ نوازشریف کودھمکیاں دی جارہی ہیں کہ آپ کی بیٹی باز نہ آئی تو اسے ختم کردیں گے، میں نے نوازشریف کوکہا کہ زندگی اورموت اللہ کے ہاتھ میں ہے نیب یا حکومت کےہاتھ میں نہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ 26 مارچ کو نیب میں پیش ہوں گی، 26 مارچ کو لانگ مارچ نہیں ہوگا لیکن ان کو اتنا ڈر تھا کہ جس دن لانگ مارچ تھا، اسی دن نیب نے مجھے بلالیا۔
مریم نواز کا کہنا تھاکہ جتنی قربانیاں دینی تھیں دے دیں، اب قربانیاں دینے کا نہیں حساب لینے کا وقت ہے، اگرنیب نے گڑبڑکرنے کی کوشش کی تو ن لیگ مقابلہ کرے گی۔
لیگی نائب صدر نے انکشاف کیا کہ پاناما کے وقت نوازشریف کوکہا گیا استعفیٰ دوپاناما ختم ہوجائے گا لیکن نوازشریف نے دباؤ میں آکراستعفیٰ دینے سے انکارکردیا، نوازشریف نے استعفیٰ نہیں دیا تو جھوٹے کیس میں نکالا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں