دیرپا امن کے قیام کیلئے آپریشن ردالفساد کی بدولت واضح سنگ میل عبور ہوا ہے، ڈی جی آئی ایس پی آر

دیرپا امن کے قیام کیلئے آپریشن ردالفساد کی بدولت واضح سنگ میل عبور ہوا ہے، ڈی جی آئی ایس پی آر
فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے ڈائریکٹر جنرل میجرجنرل بابرافتخار نے کہا ہے کہ ملک بھر میں دیرپا امن کے قیام کے لئے آپریشن ردالفساد کی بدولت واضح سنگ میل عبور ہوا ہے۔
انہوں نے پیر کی سہ پہر راولپنڈی میں آپریشن ردالفساد کے چار سال مکمل ہونے پر ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سکیورٹی فورسز نے یہ آپریشن عوام کے تعاون سے انسداد دہشت گردی اور تشدد کے خاتمے کی دو جہتی حکمت عملی کے تحت کیا جس کے مختلف علاقوں میں مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں۔
میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ 2017ء میں آپریشن کے آغاز کے بعد سے ملک بھر میں خفیہ معلومات پر مبنی کل تین لاکھ 75 ہزار کارروائیاں کی گئیں۔
ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ آپریشن کے دوران تین سو ترپن دہشت گرد مارے گئے جبکہ سینکڑوں کو گرفتار کیا گیا۔
انہوں نے کہا کہ گزشتہ چار برسوں کے دوران دہشت گردی کی پانچ ہزار کارروائیاں ناکام بنا دی گئیں۔
انہوں نے کہا کہ 72 ہزار غیرقانونی ہتھیار اور پچاس لاکھ گولیاں اور گولے قبضے میں لئے گئے
ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ چار سو ستانوے سرحدی چوکیاں قائم کی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں میں بارودی سرنگیں بھی ناکارہ بنا دی گئیں۔
میجرجنرل بابر افتخار نے کہا کہ ایف سی میں اٹھاون نئے شعبے قائم کئے گئے ہیں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی استعداد کار بڑھانے کیلئے مزید پندرہ شعبے قائم کئے جائیںگے انہوں نے کہاکہ پولیس اور لیویز کے عملے کو بھی تربیت دی گئی ۔
انہوں نے کہاکہ عارضی طورپر بے گھر چھیانوے فیصد افراد اپنے گھروں کو لوٹ چکے ہیں ۔
ڈی پی آئی ایس پی آر نے کہاکہ قومی لائحہ عمل کے تحت قائم کی گئی فوجی عدالتوں کو سات سو سترہ کیس بھیجے گئے جن میں سے تین سو چوالیس دہشت گردوں کو سزائے موت سنائی گئی اوران میں اٹھاون کی سزائوں پر علمدرآمد ہوا انہوں نے کہاکہ ایک سو چھ دہشت گردوں کو عمر قید کی سزا دی گئی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں