برصغیر کے ممتاز سیرت نگار اور محقق پروفیسر ڈاکٹر یاسین مظہر صدیقی بھارت میں انتقال کر گئے

علی گڑھ :برصغیر کے ممتاز سیرت نگار اور محقق پروفیسر ڈاکٹر یاسین مظہر صدیقی 86 برس کی عمر میں بھارت میں انتقال کرگئے،نماز جنازہ آج بعد نماز عشا علی گڑھ میں ادا کی جائے گی ،عالم اسلام میں پروفیسر ڈاکٹر یاسین مظہر صدیقی علم اور عاجزی کا حسین امتزاج، مروت اور رواداری کی زندہ مثال اور سادگی کا بلند و بالا مینار تھے۔

تفصیلات کے مطابق معروف سیرت نگار اور محقق پروفیسر ڈاکٹر یٰسین مظہرصدیقی ندوی آج علی گڑھ میں اپنے مالک حقیقی سے جا ملے، ڈاکٹر یاسین مظہر صدیقی 26دسمبر1944ء کو وہ اُترپردیش میں پیدا ہوئے،آپ کے والد بھی عالم دین تھے،آپ نے مولانا ابو الحسن علی ندویؒ اور مولانا محمد رابع حسنی ندویؒ جیسی شخصیات سےکسبِ فیض کیا اور تمام تعلیم دار العلوم ندوۃ العلماء ، جامعہ ملّیہ اور مسلم یونیورسٹی علی گڑھ سے حاصل کی تاہم مسلم علی گڑھ یونیورسٹی آپ کی پہچان بن گئی، جہاں آپ شعبہ تاریخ میں بطور ِ ریسرچ سکالر،بعد ازاں اُستاذ ہوگئے ، پھر ڈائریکٹر شعبہ علوم اسلامیہ کی ذمہ داری انجام دیتے رہے ۔ریٹائرمنٹ کے بعد آپ کو یونیورسٹی کے ذیلی ادارہ’ شاہ ولی اللّٰہ ریسرچ سیل’ کا سربراہ بنا دیا گیا تھا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں