طالبان کیساتھ مل کر کام کرینگے، بیٹھ کر معاہدے نہیں:ایرانی وزیر خارجہ

ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے کہاہے کہ ہم طالبان کیساتھ کام کریں گے لیکن ان کیساتھ بیٹھ کر کابل کے مستقبل کے معاہدے نہیں کریں گے۔
افغان ٹی وی کو انٹرویو میں ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ طالبان نے کئی دہشتگرد کارروائیاں کی ہیں،ایران نے انہیں دہشتگردوں کی فہرست سے نہیں نکالا۔ امریکا افغان حکومت کو سائیڈلائن کرکے طالبان کیساتھ بیٹھ گیا ہے۔
بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ امریکا طالبان سے معاہدے کے بجائے امن عمل میں سہولت کار بنے، طالبان کیساتھ مل کر کام کرینگے لیکن مستقبل کے کوئی معاہدے نہیں کیے جائیں گے۔ شام میں 2ہزار افغان جنگجو برسرپیکار ہیں،ہم نے کسی کو شام نہیں بھیجا وہ رضاکارانہ طور پرگئے ہیں۔
جواد ظریف کا کہنا تھا کہ اگر کابل حکومت راضی ہوئی تو مزید جنگجوﺅں کو داعش کیخلاف مسلح کرینگے، شام میں داعش کیخلاف برسرپیکار اتحاد کی ہم نے مدد کی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں